Tuesday, 8 April 2014

Prime Minister Youth Loan Scheme is Haram and Un Islamic. Mufti Naeem

Mufti Muhammad Naeem Of Jamia Benouri Karachi declared Prime Minsiter youth Loan Scheme for youth as illegal and Haram according to the Teaching of Islam.
In a verdict he declared that the loans are interest base which is Haram according to the Islam and is considered war against the Allah and His Prophet PBUH therefore the Muslims should be careful about this project and should not avail these loans.

He appealed the Muslims of Pakistan that Interest base economy is damaging the country and Prime Minister youth loan scheme will more do it as God will curse us for having this Haram Practice in our country.
He asked The PM Nawaz Sharif to introduce loans without any interest if he is sincere with the youth of the nation and curb all the interest base economic activities in the country at once to have good time after life for all.
Daily Pakistan reports about Mufti Muhammad Naeem,s Verdict regarding Prime Minister youth Loan Scheme.
The details of his statement are copied here for Pashto Times viewers.
جامعہ بنوریہ عالمیہ کے مہتمم وشیخ الحدیث مفتی محمد نعیم نے کہاکہ حکومت کی”یوتھ لون سکیم “سودی ہونی کی وجہ سے خالصتاحرام ہے، لون سکیم لینے اوردینے والے دونوں گناہ کبیرہ کے مرتکب اوراعلانیہ اللہ سے بغاوت کاجرم کررہے ہیں ،اس لئے عوام سے اپیل ہے کہ وزیراعظم یوتھ لون سکیم لینے سے اجتناب کریں،ہماری بداعمالیوں کیوجہ سے ملک پہلے ہی طرح طرح کے آفات کاشکارہے، سودی قرض پر مبنی ا سکیم اللہ تعالی کی ناراضگی کاسبب بن کرملکی معیشت کی مزیدتباہی کا باعث بنے گا ،وزیر اعظم اگر قوم سے مخلص ہیں تو نسل نو کو سودی قرضوں کی بجائے قرضہ حسنہ یا روزگاروکاروبارکے مواقع فراہم کریں۔ان خیالات کاظہارانہوں نے جامعہ بنوریہ عالمیہ میں مقامی نیوزچینل کوانٹرویوکے دوران کیا۔مفتی محمدنعیم نے مزیدکہاکہ حکومت کا نواجوانوں کےلئے سودی قرض کرپشن کے نئے دروازے کھولنے کے مترادف ہے ، وزیر اعظم نواز شریف قوم کےساتھ مخلص ہیں تونوجوانوںکوسودی قرضوں کی بجائے قرض حسنہ یا کاربارکے مواقع فراہم کرنے ہوں گے جس کےلئے ضروری ہے کہ امن وامان کی صورتحال بہتربنائی جائے ،تاجروں کوتحفظ اوردیگرمعاملات میں اعتماددلایاجائے اورایسے منصوبے شروع کئے جائیںجس سے گیس وبجلی کی لوڈشیڈنگ ختم ہو تاکہ ہمارے کارخانے ،صنعتیں دوبارہ آبادہوں ، سودی قرض کے اجراءمیں موجود کڑی شرائظ سے لگتاہے کہ حکومت نے قرض نہیں بلکہ کرپشن کے نئے مواقع فراہم کرنے کی کوشش کی ہے،جوکہ اسلام کے نام پر معارض وجود میں آنے والے ملک کے آئین ونظریہ سے متصادم اور ملکی معیشت کی تباہی کے اسباب ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ جس کام میں اللہ کی ناراضگی شامل ہو اس میں برکتیں اور ترقی نہیں زوال آتاہے، قرآن مجید سورہ بقرہ کی آیت نمبر 279میں سود کو اللہ تعالی اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے جنگ قرار دیا گیا ہے جبکہ بہت سی احادیث مبارکہ میں بھی سودکے حوالے سے سخت وعیدیںآئی ہیں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے سود کھانے والے، سود کھلانے والے، یہاں تک کہ سود کا حساب لکھنے والے پر لعنت کی ہے۔انہوں نے مزید کہاکہ حکومت کا”یوتھ لون سکیم “سودی ہونے کیوجہ سے خالصتاحرام ہے لون اسکیم لینے اوردینے والے دونوںگناہ کبیرہ کے مرتکب اوراعلانیہ اللہ سے بغاوت کاجرم کررہے ہیںاس لئے عوام الناس سے اپیل ہے کہ وزیراعظم یوتھ لون اسکیم لینے سے اجتناب کریں،ہماری بداعمالیوںکیوجہ سے ملک پہلے ہی طرح طرح کے آفات کا شکار ہے،سودی قرض پر مبنی ا سکیم اللہ تعالی کی ناراضگی کاسبب بن کرملکی معیشت کی مزیدتباہی کا باعث بنے گا ۔مفتی محمدنعیم نے کہاکہ عوام کوسودی قرضوں سے زیادہ پرامن پاکستان کی ضرورت ہے،حکمران بتائیں دہشت گردی ، بھتہ خوری ، ڈکیٹیوں کے باعث گھروں میں قید عوام کاروبار کیسے کریں گے

No comments:

Post a Comment