Wednesday, 23 April 2014

We will Destroy Pakistan In Six Months. Shevsina Of India

Extremist and terrorist Hindu Organization Shivsina claimed that if Modi wins in general Election being conducted in India then they will destroy Pakistan in coming six months.However Kashmiri Leader Umer Abdullah still opposing the Fucked Modi and proffered to migrate Pakistan instead of supporting bloody Modi.
In Mumbai the terrorist Shivsina stupid leader Ramdas Kadam told the people in a gethering that would destroy Pakistan in six months if they win in the election and Modi becomes the Prime Minister of India. They also threatened opponents of Modi that they should leave India and go to Pakistan as they if some one according to them is against Modi is like against India and Pro Pakistan.
The Umer Abdullah Responded the statement while saying that yes he would prefer to migrate Pakistan instead of having good times with fucked Modi.
Shivsina is strong supporter of BJP in General election of India and both the orgs are considered Hindu extremists.
نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) انتہاءپسند ہندو تنظیم شیوسینا نے دعویٰ کیا ہے کہ اگر بی جے پی کے
 رہنماءاور نامزدوزیراعظم نریندرا مودی اقتدار میں آگئے تو وہ پاکستان کو چھ ماہ میں تباہ کردیں گے تاہم عمرعبداللہ نے مودی کی مخالفت ختم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہاکہ وہ بھارت چھوڑ کر پاکستان تو جاسکتے ہیں لیکن مودی کو معاف نہیں کرسکتے ۔ ممبئی میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے شیوسینا کے راہنما رامدیس کادام نے کہا ہے کہ نریندرا مودی پاکستان کو صرف چھ ماہ کے اندر تباہ کردیں گے، اگر کبھی مہاراشٹر میں مسلمان کسی ظلم کیخلاف مظاہرہ کی کوشش بھی کرتے تو نریندرا مودی انہیں یقیناً سبق سکھاتے۔ دریں اثناءبی جے پی کی جانب سے ٹویٹر پیغامات میں شیوسینا اور ویشوا ہندو پریشد کے بیانات کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے اسے پراپیگنڈے کی نئی چال قرار دیا ہے۔ ادھر مقبوضہ کشمیر کے وزیراعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ بی جے پی کی حمایت کی بجائے پاکستان ہجرت کرنے کو ترجیح دوں گا۔ پریناگ اور کوکرناگ میں عوامی ریلی سے خطاب کے دوران عمر عبداللہ نے بی جے پی کے رہنما گیر جیراج سنگھ کے حالیہ بیان پر ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کا یہ کہنا ہے کہ مودی کے مخالفین کو پاکستان چلے جانا چاہیے تو اس پر وہ اُن کے شکرگزار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یقیناًوہ بی جے پی کی حمایت کی بجائے یہاں سے براہ راست سرینگر مظفر آباد بس سروس کے ذریعے پاکستان جانے کو ترجیح دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ میں سرینگر مظفر آباد بس سروس کا شکر گزار ہوں کہ اس کی وجہ سے مجھے اب نئی دہلی کا راستہ بھی استعمال نہیں کرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ انتخابات کسی اسمبلی رکن کے انتخابات کیلئے نہیں بلکہ وزیراعظم کو منتخب کرنے کیلئے ہورہے ہیں اور میں ان انتخابات کے بعد کشمیری عوام کے مسائل حکومت کے سامنے نئے انداز سے پیش کروں گا۔
Thank You For Visiting Pashto Times.




No comments:

Post a Comment