Wednesday, 7 May 2014

Strategy to cope PTI developed by PM.

وزیراعظم نواز شریف نے لوڈشیڈنگ کا موجودہ دورانیہ ناقابل قبول قرار دیتے ہوئے اسے کم کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم نواز شریف کی زیر صدارت لوڈشیڈنگ پر اجلاس ہوا جس میں ملک میں جاری لوڈشیڈنگ سے متعلق جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں وزیراعظم کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ گیارہ مئی تک 1000 میگاواٹ بجلی اور رواں ماہ کے آخر تک 3500 میگاواٹ بجلی سسٹم میں آ جائے گی۔ اس موقع پر وزیراعظم نواز شریف نے 3 روز میں پاور پلانٹس کو تیل کی فراہمی کا مسئلہ حل کرنے اور ریلوے کے ذریعے بجلی گھروں کو ایندھن فراہم کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ شہری علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 6 گھنٹے اور دیہات میں 7 گھنٹے تک لایا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایندھن کی بلاتعطل فراہمی سے 630 میگاواٹ بجلی نظام میں شامل ہو گی جس سے لوڈشیڈنگ کے دورانیہ کم کرنے میں مدد ملے گی۔ وزیراعظم نواز شریف نے ہدایت کی کہ 11 مئی سے قبل بجلی کی پیداوار میں اضافہ کیا جائے اورتھرمل و پن بجلی کی اضافی پیداوار عمل میں لائی جائے جس کے لئے وزیر اعظم نے تھرمل پاور پلانٹس کو 5ہزار ٹن اضافی تیل درآمد کرنے کی بھی منظوری دی۔ میڈیا ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نوازشریف نے اجلاس میں وزارت پانی و بجلی حکام کو سختی سے ہدایت کی کہ جلد سے جلد بجلی بحران پر قابو پایا جائے اور خصوصاً گیارہ مئی سے قبل ہی ملک بھر میں بجلی کی بندش کا دورانیہ کم کیا جائے
Thanks for visiting Pashto Times.




No comments:

Post a Comment